بلوچستان کی پہلی کلائوڈ پالیسی سے متعلق اجلاس

’’یہ پالیسی اداروں کے مابین باہمی رابطہ کاری و تعاون مضبوط اور معاملات میں شفافیت لائے گی جس سے سرکاری اخراجات میں نمایاں کمی کرکے ٹیکس دہندگان کا پیسہ بچایا جاسکتا ہے۔‘‘صوبائی وزیرایکسائز و اسمال انڈسٹریز پرنس احمد علی احمدزئی

  ’’حکومت بلوچستان ٹیکنالوجی کے بھرپور استعمال کے ذریعے سرکاری اداروں کی کاردکردگی اور عوام کو سروسز کی بہترفراہمی کیلئے پرعزم ہے۔‘‘ ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیرایکسائز و اسمال انڈسٹریز پرنس احمد علی احمدزئی نے صوبہ کی پہلی کلائوڈ پالیسی سے متعلق اجلاس کی سربراہی کرتے ہوئے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ اس پالیسی اور ٹیکنالوجی کے بہترین استعمال سے اداروں کے مابین باہمی رابطہ کاری و تعاون مضبوط اور معاملات میں شفافیت آئے گی جس سے سرکاری اخراجات میں نمایاں کمی کرکے ٹیکس دہندگان کا پیسہ بچایا جاسکتا ہے جو ہمارا بنیادی مقصد ہونا چاہیے۔ اجلاس میں نگراں وزیر اطلاعات و تعلقات عامہ جان اچکزئی، نگراں وزیر معدنیات محمد عمیر محمد حسنی، سیکریٹری سائنس و ٹیکنالوجی محمد ایازمندوخیل، سیکریٹری پلاننگ لعل جان جعفر اور ایڈیشنل سیکریٹری فنانس حمید اللہ ناصر نے شرکت کی۔ شرکا کو صوبہ کی پہلی کلائوڈ پالیسی پر تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ صوبائی وزیرایکسائز و اسمال انڈسٹریز پرنس احمد علی احمدزئی اس موقع پر کہا کہ اس پالیسی سے مقامی اور غیرملکی سرمایہ کاروں کا اعتماد بہتر ہوگا اور صوبہ میں براہ راست سرمایہ کاری میں نمایاں اضافہ ہوگا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں