عالمی اداروں کیلیے سرمایہ کاری کے شاندار مواقع ہیں، نگراں وزیر آئی ٹی

نگراں وفاقی وزیر آئی ٹی و ٹیلی کمیونی کیشن ڈاکٹر عمر سیف نے کہا ہے کہ عالمی اداروں کے لیے ڈیجیٹل بینکنگ، فن ٹیک، ایگری ٹیک ، ٹیلی کام، انفرا اسٹرکچر، میں سرمایہ کاری کے شاندار مواقع موجود ہیں۔

انہوں نے کہا کہ  عالمی سرمایہ کاروں کو ٹیکس رعایت، 100 فی صد مالکانہ حقوق سمیت متعدد سہولیات دے رہے ہیں۔ پاکستان ٹیلی کام شعبے میں ایک وسیع مارکیٹ اور 192 ملین سیلولرصارفین کا حامل ملک ہے۔ موبائل ڈیوائسز کے بعد عنقریب بیٹریز اور دیگر پارٹس کی تیاری شروع ہو جائے گی۔

وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق نگراں وزیر آئی ٹی ڈاکٹر عمر سیف کی سربراہی میں پاکستان کا وفد گلوبل انفارمیشن ٹیکنالوجی نمائش جائیٹکس گلوبل 2023 میں شرکت کے لیے دبئی پہنچ گیا ہے۔نمائش میں پاکستان سافٹ ویئر ایکسپورٹ بورڈ، اگنائٹ، پاکستان سافٹ ویئر ہاوٴسز ایسوسی ایشن کے آفیشلزشریک ہیں۔

پاکستان سے 54 آئی ٹی کمپنیاں اور 30 اسٹارٹ اپس بھی دبئی گلوبل نمائش میں شریک ہیں۔ 16 سے 20 اکتوبر تک جاری دبئی گلوبل نمائش میں 170 ممالک سے 6 ہزار آئی ٹی کمپنیوں کے نمائندگان شرکت کر رہے ہیں۔ جائیٹکس گلوبل میں سپر بریج سمٹ کے افتتاحی سیشن سے خطاب اور عالمی نیوز چینلز کو انٹرویو میں ڈاکٹرعمرسیف نے پاکستان کی آئی ٹی انڈسٹری کے پوٹینشل کو اجاگر کیا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان 241 ملین آبادی والا بڑا ملک ہے،جس کی اہمیت سے انکار نہیں کیا جاسکتا۔ پاکستان کی 65 فیصد آبادی 30 سال سے کم عمر باصلاحیت افراد پر مشتمل ہے۔ دنیا پاکستان کے آئی ٹی ہنرمندوں کی قابلیت اورجغرافیائی پوزیشن سے بہتر فائدہ اٹھا سکتی ہے۔ پاکستان چیلنجز کے باوجود ٹیکنالوجی کے میدان میں تیزی سے آگے بڑھ رہا ہے۔

پاکستان کی 85 فیصد آبادی بینکوں میں اکاوٴنٹ نہیں رکھتی، بلکہ کیش یا دیگر ذرائع سے ڈیلنگ کرتی ہے۔ ان افراد کو مناسب ڈیجیٹل پیمنٹ وے کی سہولت کی فراہمی اولین ترجیح ہے۔ پے پال یا دیگر پیمنٹ کمپنیوں کے لیے  پاکستان اربوں روپے منافع کی بڑی اور پرکشش مارکیٹ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں